تحفہ خداوندی‘، قیمت صرف پانچ روپے’

تحفہ خداوندی‘، قیمت صرف پانچ روپے’

    by -
    0 65

    میں نے واپسی پر وہ منجن ایک دوست کو گفٹ کر دیا جسے منجن کرنے کا شوق ہے۔ آخری اطلاع آنے تک وہ بولنے سے قاصر ہے، منجن سے اس کی زبان پر چھالے نکل آئے ہیں اور ایسی زبان میں بولتا ہے کہ ہر لفظ ہی ’فحش‘ لگتا ہے تاہم اس کے آنکھوں سے ایسی گندی گندی گالیاں نکل رہی ہیں جو یہاں بیان کرنا مناسب نہیں۔

    لاہور سے کراچی جاتے ہوئے جو اکثر ریل پر ہی گیا ہوں کئی بار ایسا ہوتا ہے کہ میں سیٹ چھوڑ کر دروازے میں آ کھڑا ہوتا ہوں کہ یہاں مجھے بہت سے کردار مل جاتے ہیں۔ دوسری اہم بات یہ ہے کہ ٹرین کے سفر میں کھانے پینے کی کوئی چیز ہاتھ سے نہیں جانے دیتا۔ میرے ڈبے میں امرودوں والا آ جائے، مونگ پھلی، قلفی، جوس، حتٰی کہ ٹافیوں والا بھی آ جائے تو میرے منہ میں پانی آنے لگتا ہے۔ میرا جی چاہتا ہے کہ جھپٹا مار کر اس کی ساری ٹافیاں چھین لوں۔

    چونکہ ایسا ممکن نہیں ہوتا اس لیے میں بڑا محتاط طریقہ اختیار کرتا ہوں۔ میں جس حلیے اور عمر میں ہوں اس میں بندہ ٹافیاں کھاتے ہوئے بڑا عجیب سا لگتا ہے۔ لہذا میں ڈبے میں سے کسی بچے کو اپنا دوست بناتا ہوں پھر اس کے لیے اسے ساتھ کھڑا کر کے قلفی، جوس، ٹافیاں خریدتا ہوں یہ اور بات کہ بچے کو اتنا ہی حصہ ملتا ہے جتنا مولانا فضل الرحمان کو حکومت میں ہر دور میں ملتا ہے یعنی ایک آدھ چیز۔

    مجھے یاد ہے کہ ایک دفعہ ٹرین ہی کے سفر میں پھیری والے کے پاس رنگین سونف دیکھی تو میرا دل مچل اُٹھا۔ میں نے اس سے سونف کا پیکٹ مانگا۔ اس مردِ مجاہد نے بیس روپے کی خطیر رقم لے کر ایک چھوٹا سا فیڈر میرے ہاتھ میں پکڑا دیا جس میں سونف بھری ہوئی تھی۔ کافی دیر تک تو اس کا طریقہ استعمال سمجھ نہ آیا پھر ایک بچے نے بتایا کہ انکل فیڈر اوپر سے کھُل جاتا ہے۔

    اس مرتبہ کراچی جاتے ہوئے ٹرین ساہیوال پہنچی تو ایک صاحب بڑا سا بکسہ اٹھائے ڈبے میں داخل ہوئے۔ پہلے بسم اللہ اور کلمہ پڑھا پھر گویا ہوئے، ’’بھائیو اور بہنو! میں کوئی حکیم نہیں کوئی ڈاکٹر نہیں کوئی عامل نہیں، عرصہ دس سال سے اس اسٹیشن پر رزق حلال کما رہا ہوں۔ بھائیو اور بہنو میں آپ کے لیے ایک تحفہ خداوندی لایا ہوں۔ زیادہ تفصیل میں نہیں جاؤں گا، یہ جو پاؤڈر میرے ہاتھ میں ہے یہ بہت انمول ہے۔ جس بہن بھائی کے مسوڑھوں سے خون آتا ہو اس پاؤڈر کو لگائیں، انشااللہ پانچ منٹ میں فرق محسوس کریں گے۔ اس پاؤڈر کو زخموں پر بھی لگایا جا سکتا ہے۔ پانی میں بھگو کر خضاب کی جگہ بھی استعمال کر سکتے ہیں۔ کیرم بورڈ میں بھی استعمال ہو سکتا ہے۔ بھینس کو چارے میں ملا کر دیں تو ایک کلو زیادہ دودھ دے گی۔۔۔۔ قیمت صرف پانچ روپے، پانچ روپے، پانچ روپے۔‘‘

    میں نے پانچ روپے نکالے اور اس سے پوچھا، بابا جی! اس کا کوئی اور فائدہ بھی ہے؟ بابے نے نوٹ میرے ہاتھ سے اچک لیا اور بولا، ’’ہاں ہے لیکن تمہارے کام کا نہیں‘‘۔ میں نے واپسی پر وہ منجن ایک دوست کو گفٹ کر دیا جسے منجن کرنے کا شوق ہے۔ آخری اطلاع آنے تک وہ بولنے سے قاصر ہے، منجن سے اس کی زبان پر چھالے نکل آئے ہیں اور ایسی زبان میں بولتا ہے کہ ہر لفظ ہی ’فحش‘ لگتا ہے تاہم اس کے آنکھوں سے ایسی گندی گندی گالیاں نکل رہی ہیں جو یہاں بیان کرنا مناسب نہیں۔

    NO COMMENTS

    Leave a Reply